Discy Latest Questions

  1. جواب : دوست ہونے کے باوجود ان دونوں میں روایتی سوچ کا فرق تھا اور دونوں نے ایک عرصے تک جھوٹ کا سہارا لیتے رہے تاکہ وہ اپنی برتری منوا سکیں۔

    • 0
  1. جواب : اس دوستی اور ہم آہنگی کے باوجود ان کی سوچ میں فرق تھا، مبیل خود کو عورت ہونے کے ناطے رعایت کا حقدار سمجھتی تھی جبکہ پطرس بخاری مرد ہونے کی بنا پر خود کو برتر منوانا چاہتے تھے اور ان کو مبیل کے گہرے مطالعہ کا بھی دکھ تھا۔

    • 0
  1. جواب : میبل اور مصنف میں دوستی کی وجہ ان کی ذہنی ہم آہنگی تھی۔ دونوں کی دلچسپیاں ایک دوسرے سے میل کھاتی تھیں۔ دونوں مصوری اور موسیقی کے شیدائی تھے۔ اس کے علاوہ دونوں کتابوں کا مطالعہ کرنے کے بھی عادی تھے۔

    • 0
  1. جواب : اس سبق سے ہمیں یہ رہمنائی حاصل ہوتی ہے کہ بلا وجہ کی ضد اکثر ہمارے لیے نقصان کا باعث ہوتی ہے اور یہ بھی کہ والدین جو بھی کرتے ہیں ہماری بھلائی کے لیے ہی کرتے ہیں، ہمیں ان کی بات ماننی چاہیے۔

    • 0
  1. جواب : انہوں نے پہلے ہر ممکن کوشش کی، ضد کر کے گھر والوں کو منانے کی بھی کوشش کی، مگر جب کوئی چارہ نہ نظر آیا تو گھر آئے مہمان کی بائسیکل لے کر چلے گئے۔

    • 0
  1. جواب : مصنف کے بقول دنیا میں لوگوں کے شوق بائسیکل کے ہوں یا خان بہادری کے ، جیل جانے کے ہوں یا گول میز کانفرنسس جانے کے یا کسی اعلی عہدے تک پہنچنے کے ہوں، انسان ان کو پورا کرنے کے لیے کسی بھی حد تک جانے کو تیار ہوجاتا ہے۔ اور اس کے لیے وہ ہر جائز و ناجائز طریقہ اختیار کرتا ہے۔

    • 0
  1. جواب : مسلم لیگ ایک ایسی تحریک کا نام ہے جس کا مقصد مسلمانوں کو ایک جگہ متحد کر کے ایک علیحدہ وطن کا مطالبہ کیا جائے۔ قائداعظم کی قیادت میں مسلم لیگ (جس میں بچے بوڑھے جوان عورتیں سب شامل تھے ) نے ایک ہی ماہ کے اندر انگریزوں کو متاثر کیا اور وہ اس بات کے قائل ہوگئے کے اب اس قومی مطالبے کو زیادہ التواRead more

    • 0
  1. جواب : سرسید کے بعد ان کے جانشینوں نے ان کے بعد بھی ان کے کارِ خیر کو جاری رکھا۔ محسن الملک نے علی گڑھ کی ترقی میں اہم کردار ادا کیا۔ وقار الملک ایک سیاسی جماعت کی تشکیل میں معاون ہوئے۔ اور حالی نے اپنی مسدس سے ہندوستانی مسلمانوں میں آزادی کی نئی لہر پیدا کی ۔ شبلی نے انہیں اپنی اسلامی تحریک سے بہروRead more

    • 0