Discy Latest Questions

  1. جواب: جب بادشاہ کا جنازہ نکلا تو جنازہ کے پیچھے اس کا بیٹا اسے روتے روتے کہہ رہا تھا جس جگہ آپ کو لے جایا جا رہا ہے وہاں کوئی آپ کا مددگار نہیں ہوگا۔ اور اس جنازے میں ایک غریب آدمی نے اپنے نور نظر ( بیٹا) کو بھی ساتھ لایا تھا اور اس کا بیٹا قبر کے بارے میں ابھی کچھ نہیں جانتا تھا۔ جب اس نے بادشاہ کیRead more

    • 0
  1. This answer was edited.

    ”قبر“ اخترالایمان کی ایک شاہکار نظم ہے۔ اس نظم میں شاعر نے عجم کے شہر کے ایک رئیس کی کہانی بیان کی ہے کہ وہ ایک روز بیمار پڑ گیا۔ اس کے پاس بہت ساری دولت تھی اسی لیے لوگ دور دور سے اس کی عیادت کے لیے آتے اور اس کے علاوہ اس کے علاج کے لئے بہت سارے ڈاکٹروں کو بلایا گیا۔ لیکن کسی کا علاج کارگر ثابت نہRead more

    • 0
  1. جواب: نظم میں آخری مصرعہ نکال کر یہ تاثر قائم ہو گا کہ ایک تو نظم ادھوری ہے اور دوسرا یہ کہ جو غریبی کی داستان شاعر کہنا چاہتا ہے وہ ان کے بغیر ناممکن ہے۔

    • 0
  1. جواب: غریب کے بچے کو قبر کی باتیں سن کر اپنا گھر اس لیے یاد آیا کیونکہ اس غریب کا گھر قبر سے ملتا جلتا تھا۔ وہاں اس کو ضرورت کی چیزیں میسر نہیں تھیں۔

    • 0
  1. جواب: شاعر نے ریئس کے بیٹے کی زبانی قبر کی یہ تفصیلات بیان کی ہے کہ قبر میں اندھیرا ہوتا ہے، وہاں کوئی مددگار نہیں ہوتا، کھانا پینا نہیں ہوتا اور وہاں اکیلا رہنا پڑتا ہے۔

    • 0