Discy Latest Questions

  1. جواب: لذت رسوائی: لذت رسوائی میں انسان اپنے آپ کی پرواہ کیے بغیر اپنے محبوب کو پانے کی کوشش کرتا ہے اگر چہ اس سفر میں اسے رسوائی ہی ہاتھ کیوں نہ آئے مگر اس رسوائی میں بھی ایک لذت اور مزہ محسوس ہوتا ہے۔

    • 0
  1. جواب: گوشہ تنہائی سے مراد فرصت کے لمحات میں اپنے کیے پر پچھتانا اور اپنے ضمیر کی ملامت کرنا ہے۔کیونکہ تنہائی ہی اچھا دوست ہے جو سب کچھ اچھا یا برا سمجھا تی ہے۔

    • 0
  1. جواب: شاعر کی نظر میں دنیائے محبت کی جو چیز نرالی ہے وہ خاموش نظروں کا تقاضا اور گفتگو ہے۔ جیسے کہ کچھ کہا ہی نہیں اور سب کچھ سنا ہے۔ یعنی دل کی کیفیت کتنی اچھی ہو جاتی ہے جب محبوب کی آنکھوں سے آنکھیں مل جاتی ہیں تو اشاروں میں ہی ساری گفتگو ہو جاتی ہے اور الفاظ کی اس وقت کوئی ضرورت نہیں ہوتی۔

    • 0
  1. جواب: سیلاب تبسم سے مراد ہر غم سے دور رہنا ہے۔ اس شعر میں شاعر کہہ رہے ہیں کہ میرے محبوب کے ہونٹوں پر ہر وقت تبسم کی لہر ہے اور ایسا لگتا ہے وہ ایک الگ ہی دنیا سے آیا ہے، اس کو کسی چیز کا غم ہی نہیں ہوتا کیونکہ یہ دنیا غموں کا بازار ہے لہٰذا میرا محبوب کسی آسمان کا فرشتہ لگ رہا ہے جسے نہ کوئی غم اورRead more

    • 0
  1. میر غلام رسول نازکی بدھوار 4 ربیع الاول1328ھ 1910ء کو پیدا ہوئے۔ ان کے والد میر غلام مصطفی نازکی نے1911 میں سرینگر سے ہجرت کرکے بانڈی پورہ میں سکونت اختیار کی۔ غلام رسول نازکی کا بچپن وہی گزرا۔ انہوں نے فارسی اور عربی کی ابتدائی تعلیم وہیں اپنے والد سے حاصل کی جو عربی اور فارسی کے بڑے عالم تھے۔ چھٹیRead more

    • 0