Discy Latest Questions

  1. جواب: ہر شام مایوس لوٹنے کے بعد بھی من کا طوطا ہر صبح گھر سے اس لیے نکل جاتا ہے تاکہ اس کی ساری خواہشات پوری ہو جائیں۔ انسان کی خواہشات تو لا محدود ہیں ان میں سے کچھ ہی پوری ہو پاتی ہیں جیسے من کے طوطے نے دریا کے کنارے بیٹھی خوبصورت سی عورت کے لیے دھن دولت، مکان،سانپ سے کٹوانا یہ سب کیا۔لیکن یہ سب کRead more

    • 0
  1. جواب: طوطے نے ایسا اس لئے بولا کیونکہ مصنف ایک پڑھا لکھا شخص ہے اور وہ کوئی بھی کام کرنے سے پہلے اسے اس کے بارے میں سوچتا ہے اور یہ دیکھتا ہے کہ وہ عقل کی کسوٹی پر پورا اترتا ہے کہ نہیں اور اگر وہ عقل کے مطابق ہوتا ہے تو ہی وہ اس کا م کو کرتا ہے۔اس لئے من کے طوطے نے دلی خواہشات کو پورا نہ ہونے پر مصRead more

    • 0
  1. جواب: مصنف نے من کا طوطا سے مراد خواہشیں لی ہیں کہ انسان کے دل میں ہزاروں خواہشیں دبی ہوتی ہیں۔ کبھی سماج اس کی ان خواہشوں کو پورا نہیں ہونے دیتا یا پھر کبھی عقل آڑے آجاتی ہے۔کچھ لوگوں کی خواہشیں پایۂ تکمیل کو پہنچ جاتی ہیں اور جن کی نہیں پوری ہوتی وہ اسی من کے طوطے طرح خیالوں میں سیر کرتے ہیں۔

    • 0