Discy Latest Questions

  1. جواب : مصنف نے جب فقیر کو نوکری کی پیش کش کی تو اس نے کہا کہ آپ دس روپیہ دیتے ہیں۔ ڈھائی آنہ روز کا تو گائے رزقہ کھاتی ہے اور ایک بیوی تین بچے ہیں۔ پانچ روپیہ میں گزر کیسے ممکن ہے اگر 30 روپیہ ماہوار تنخواہ ہو تو گھر کا خرچ چل سکتا ہے اس سے کم میں گزارا نہیں کر سکتے اور ابھی فقیری چھوڑنے کو تیار ہیںRead more

    • 0
  1. جواب : ہٹے کٹے فقیر کو دیکھ کر مصنف غصہ میں ہو گیا کہ ایک ہٹا کٹا، انتہا سے زیادہ مضبوط فقیر ڈکاریں لے رہا ہے۔ وہ صرف ایک فقیروں والی کفنی پہنے ہوئے تھا ایسا معلوم ہوتا تھا کہ صبح کی سرد ہوا سے لطف اٹھا رہا ہے۔ اس کو دیکھ کر مصنف کا سارا کھایا پیا خون ہوگیا اس کا دل چاہا کہ اس کم بخت کا منہ نوچ لے اRead more

    • 0
  1. جواب :مصنف کو پہلے فقیر پر رحم اس لیے آیا کیونکہ وہ حقیقت میں رحم کے قابل تھا۔ وہ ایک فاقہ زدہ، ضعیف العمری، بے کسی اور بے بسی کی تصویر تھا۔ اس کی حالت زار دیکھ کر رحم آگیا اور اس کے حلیہ سے غریبی جھلک رہی تھی۔

    • 0
  1. جواب : مصنف کو فقیروں سے بغض اس لیے تھا کہ اس نے بہت سے فقیر دیکھے تھے جو بہت زیادہ تندرست اور ہٹے کٹے ہونے کے باوجود بھیک مانگتے تھے اور اس سے دو گنا کافی بھی تھے۔

    • 0