1.     افسانہ، کہانی، ڈرامہ، ناول، فلم، فیچر وغیرہ ان میں تھوڑا تھوڑا فرق ہوتا ہے۔ کردار، ڈائیلاگ، مکالمہ، منظر کشی اور کہانی سب میں مشترکہ طور پر ہوتے ہیں۔ مثال کے طور پر افسانے اور کہانی میں فرق یہ ہے کہ کہانی میں اصل واقعہ اور واقعیت ہوتی ہے، جبکہ افسانے میں اصل تخیل اور خیالات ہوتے ہیں۔ پRead more

    • 0
  2. جواب : کسی بھی کہانی میں جب ایک کردار حال میں سوچتے ہوئے ماضی میں چلا جاتا ہے اور اپنے حال کو ماضی سے مربوط کرکے سوچتا ہے تو اس سے فلیش بیک کہا جاتا ہے ۔ اکثر ناول نگار اس تکنیک کو استعمال کرتے ہیں جس میں وہ کردار کو حال میں رکھتے ہوئے اس کی سوچ کو ماضی میں لے جاتے ہیں اس حال کو ماضی سے سمبندھ رکھنےRead more

    • 0
  3. جواب : انیسویں صدی عیسوی میں افسانوی نثر کے حوالے سے جس تصنیف کا تذکرہ ملتا ہے وہ "باغ و بہار" ہے باغ وبہار 1801ء میں میرامن نے لکھی۔

    • 0
  4. جواب : لفظی اسلوب سے نثر کی درج ذیل چار قسمیں ہیں۔ 1۔عاری نثر 2۔مرجز نثر 3۔مقفیٰ نثر 4۔مسجع نثر

    • 0
  5. جواب: افسانوی نثر میں وہ تمام نثری اصناف آجاتی ہیں۔ جن میں کوئی کہانی بیان ہوئی ہو مثلاً داستان ، ڈرامہ ، ناول ، ناولٹ ، افسانہ وغیرہ ۔ غیر افسانوی نثر میں وہ تمام نثری اصناف شامل ہیں جن میں کہانی کا عنصر نہیں ہوتا مثلاً سوانح نگاری ، شخصیت نگاری ، خاکہ نگاری ، سفرنامہ ،رپوتاز ، مضمون ، انشائیہ، تنقRead more

    • 0
  6. جواب : قرآن آخری مقدس کتاب کو کہتے ہیں جو کہ خدا کا کلام ہے۔ قرآن تمام انسانیت کے لیے بھلائی کا درس ہے، جو حضور اطہر ﷺپر وحی کے ذریعے نازل ہوئی اور آپؐ کے ذریعے ہم تک پہنچی ہے اور سنت پیغمبر ؐ کے عمل کو کہتے ہیں۔ جو عمل حضور اطہرﷺ نے کیے وہ ہمارے لیے سنت کا درجہ رکھتے ہیں۔

    • 0
  7. جواب : میکسیکو سٹی کی تعمیر و ترقی میں وہاں کی عام عوام اور وہاں کے مخلص سیاست دانوں نے اہم کردار ادا کیا ہے۔ اس کے علاوہ قبائل کے سرداروں کا بھی اس میں اہم کردار ہے۔

    • 0
  8. جواب : میکسیکو سٹی کی آب و ہوا بڑی خوشگوار ہے سے مراد ہے کہ یہاں کے لوگ بہت خوش اخلاق اور پُرتکلف ہیں۔ یہاں بلاوجہ لڑائی جھگڑا اور فساد برپا نہیں کیا جاتا ہے۔

    • 0