سوال: پودے ایک زمین سے نکال کر دوسری زمین میں لگا دینے سے اپنی نوعیت اور جنس نہیں بدل دیتے اس فقرے کی وضاحت کیجئے۔

1 Answer

  1. جواب : مصنف نے افسانے میں وحید کو ایک پودے کی مانند بتایا ہے کہ جو ایک زمین سے نکال کر دوسری زمین میں لگا دینے سے اپنی نوعیت نہیں بدل دیتا۔ جیسے آم کا پیڑ کہیں بھی لگایا جائے آم ہی رہے گا اپنی شکل نہیں بدلے گا۔ اس طرح گلاب کو کہیں بھی لگایا جائے وہ چمبیلی نہیں بن سکتا۔ اسی طرح ایک شخص جس ماحول میں پلتا اور بڑھتا ہے وہ بدل نہیں سکتا۔ وہ اپنے ماضی کو کبھی نہیں بھول سکتا اس کی زبان اور حلیہ بدل نہیں سکتا چاہے وہ جتنی بھی کوشش کرے اور کہاں بھی چلا جائے۔ اسی طرح وحید آئی سی ایس بننے کے بعد ایک اچھے عہدے پر فائز ہو گیا تھا لیکن اس کے اندر بچپن کے عادات و اطوار موجود تھے وہ اپنے ماضی کو بھول نہیں سکتا۔

    • 0