اکبر الہ آبادی کی حالات زندگی اور نظم نگاری مختصراً بیان کیجیے۔

اکبر الہ آبادی کی حالات زندگی اور نظم نگاری مختصراً بیان کیجیے۔

1 Answer

  1. اکبر الہ آبادی کا اصل نام اکبرحسین تھا۔ اکبر الہ آبادی کے نام سے مشہور ہوئے۔ تاریخی نام خورشید عالم تھا۔ ان کی پیدائش16 نومبر 1846 میں الہ آباد میں ہوئی۔ کچھ وقت بچپن کا داود نگر بہار میں اور سورام میں بھی بسر ہوا۔ ابتدائی تعلیم گھر پر ہوئی۔ گیارہ سال کی عمر میں الہ آباد کے جمنا مشن اسکول میں داخلہ لیا۔ لیکن ایک سال کے بعد ہی غدر کے ہنگامے کی وجہ سے اسکول چھوٹ گیا۔

    اس کے بعد اکبر باضابطہ تعلیم حاصل نہ کر سکے۔ البتہ انہوں نے ذاتی مطالعہ جاری رکھا اور جہاں بھی موقع ہوا پڑھتے لکھتے رہے۔ وہ فارسی عربی اور انگریزی اچھی طرح جانتے تھے۔ اکبر نے ابتدا میں کئی ملازمتیں کیں اور چھوڑیں۔ 1868 میں کچھ عرصے کیلئے نائب تحصیل دار مقرر ہوئے۔ اس کے بعد الہ آباد ،گورکھپور اور آگرہ میں وکالت کرتے رہے۔1880میں وہ منصف کے عہدے پرفائز ہوے۔ منصف کے عہدے پر انہوں نے علی گڑھ اور کانپور میں کام کیا۔ علی گڑھ میں ان کی ملاقات سرسید اور دوسرے عمائدین سے اکثر ہوتی تھی۔ اکبر کی تین شادیاں ہوئیں۔

    اکبر الہ آبادی کی شاعری

    اکبر الہ آبادی اردو کے بہت مشہور شاعر، مفکر اور مصلح قوم تھے۔ ان کا زمانہ سیاسی ، سماجی انتشار کا زمانہ تھا۔ انہوں نے سماج اور قوم کی بدتر حالت کو شدید طور پر محسوس کیا اور اسے اپنی شاعری کا روپ دے دیا۔ اکبر کی شاعری کا مقصد بھی حالی اور اقبال کی طرح اصلاحِ قوم ہی ہے۔ لیکن طنز و ظرافت نے ان کو منفرد مقام عطا کیا ہے۔

    اکبر نے انگریزی تہذیب و تمدن کے بڑھتے اثرات سے ہندوستانیوں خصوصاً مسلمانوں کو بچانے اور سرکاری ملازمت میں رہ کر اپنی بات کہنے کی غرض سے ظرافت کا پیرایہ اختیار کیا۔ اکبر کی ظریفانہ شاعری کے موضوعات متنوع اور وسیع تر ہیں۔ عورتوں کی تعلیم کا مسئلہ ہو یا مردوں کے کالج جانے کا، انگریزی کا سوال ہو یا جدید سائنسی ایجادات کے سبب مسلمانوں کے بہکنے کا خطرہ ہو، یا مذہبی عقائد کا گویا اس عہد کے ہر گوشے پر اکبر کی نگاہ ہے اور انہوں نے تمام معاملات مسائل کو سامنے رکھ کر اپنی شاعری کی ہے۔

    • 0