اردو ڈرامے کے ارتقاء میں تھیٹریکل کمپنیوں کا کیا کردار ہے؟

1 Answer

  1. سبھاؤں خصوصاً ’’اندر سبھا ‘‘ کی کامیابی کے بعد ہندوستان کے طول و عرض خصوصاً ممبئی کے پارسیوں کی توجہ اسٹیج اور ڈراموں کی جانب مبذول ہو گئی۔ اس کے علاوہ جنگل میں بھی ڈرامے کو اسٹیج کرنے کا رواج عام ہوا۔ جسکا ذکر ’’ عشرت رحمانی، پروفیسر مسعود حسین رضوی اور دیگر ناقدین ‘‘ نے اپنے مضامین میں کیا ہے۔اس دور کے ڈرامہ نگار درج ذیل ہیں

    رونق بنارسی (حاتم طائی عرف افسر سخاوت ) ۔حسینی میاں ظریف (نیرنگ عشق عرف گلزارِ عِصمت )،حافظ محمد عبداللہ (پسندیدہ آفاق معروف بہ علی بابا و چہل قزاق ) ، سید مہدی حسن احسن لکھنوی (دستاویزِ محبت ) ،پنڈت نرائن پرشاد بیتاب دہلوی (مہا بھارت ،امرت ،کرشن سوامی ) ، مستی الف خان حباب( شررِ عشق) ، عباس علی( گل رو زرینہ) ، مرزا نظیر بیگ نظیر ( فسانہ عجائب ناٹک معروف بہ جان عالم و انجمن آراء) ، امراؤ علی ( ) ، طالب بنارسی ( لیل و نہار ، راجہ گوپی چند، دلیر دل شیر عرف قسمت کا ہیر پھیر) اور نسروان جی آرام ( گل بکاؤلی )۔

    • 0